Monday, April 29, 2013

راہِ طلب میں کون کسی کا ، اپنے بھی بیگانے ہیں



راہِ طلب میں کون کسی کا ، اپنے بھی بیگانے ہیں
چاند سے مکھڑے رشکِ غزالاں سب جانے پہچانے ہیں

تنہائی سی تنہائی ہے ، کیسے کہیں ، کیسے سمجھائیں
چشم و لب و رخسار کی تہ میں روحوں کے ویرانے ہیں

اُف! یہ تلاشِ حسن و حقیقت کس جا ٹھہریں جائیں کہاں
صحنِ چمن میں پھول کھلے ہیں ، صحرا میں دیوانے ہیں

ہم کو سہارے کیا راس آئیں ، اپنا سہارا ہیں ہم آپ
خود ہی صحرا ، خود ہی دِوانے شمع نفس پروانے ہیں

بلآخر تھک ہار کے یارو ! ہم نے بھی تسلیم کیا
اپنی ذات سے عشق ہے سچا ، باقی سب افسانے ہیں
 



https://www.youtube.com/watch?v=IkJjVdxNBzs


Poet: Ibne Safi - Singer: Habib Wali Muhammad
شاعر: ابن صفی - گلوکار: حبیب ولی محمّد
 



تسکیں کو ہم نہ روئیں' جو ذوقِ نظر ملے
حورانِ خلد میں تری صورت مگر ملے

اپنی گلی میں' مجھ کو نہ کر دفن' بعد قتل
میرے پتے سے خلق کو کیوں تیرا گھر ملے؟

ساقی گری کی شرم کرو آج' ورنہ ہم
ہر شب پیاہی کرتے ہیں مے' جس قدر ملے

تجھ سے تو کچھ کلام نہیں' لیکن اے ندیم!
میرا سلام کہیو' اگر نامہ بر ملے

تم کو بھی ہم دکھائیں کہ' مجنوں نے کیا کیا
فرصت کشاکشِ غمِ پنہاں سے گر ملے

لازم نہیں کہ' خضر کی ہم پیروی کریں
جانا کہ' اک بزرگ ہمیں ہم سفر ملے

اے ساکنانِ کوچۂ دلدار! دیکھنا
تم کو کہیں جو غالبؔ آشفتہ سر ملے

https://www.youtube.com/watch?v=6fssYbS5BC0

Poet: Ghalib - Singer: Rahat Fateh Ali Khan -
کلام غالب - غزل سرا: راحت فتح علی خان -








صَد شُکر کہ اپنی رَاتوں میں اَب ہجر کی کوئی رَات نہیں



صَد شُکر کہ اپنی رَاتوں میں اَب ہجر کی کوئی رَات نہیں

مُشکل ہیں اگر حالات وہاں دِل بیچ آئیں جاں دے آئیں

دِل والو کوچہِ جَاناں میں کیاایسے بھی حالات نہیں

جس دَھج سے کوئی مَقتل میں گیا وہ شان سلامت رہتی ہے

یہ جَان تو آنی جانی ھے اِس جان کی کوئی بات نہیں

میدانِ وفا دَربار نہیں یَاں نام و نِسبت کی پُوچھ کہاں

عَاشق تو کِسی کا نام نہیں کُچھ عِشق کِسی کی ذات نہیں

گر بازی عِشق کی بازی ہے جو چاہو لگا دو ڈر کیسا

گر جیت گئے تو کیا کہنا ہارے بھی تو بازی مات نہیں

https://www.youtube.com/watch?v=D9PfB9J14k4

کب یاد میں تیرا ساتھ نہیں


کب یاد میں تیرا ساتھ نہیں
کب ہاتھ میں تیرا ہاتھ نہیں
صد شکر کہ اپنی راتوں میں
اب ہجر کی کوئی رات نہیں

مشکل میں اگر حالات وہاں
دل دے آئیں جاں بیچ آئیں
دل والو کوچہ جاناں میں
کیا ایسے بھی حالات نہیں

گر بازی عشق کی بازی ہے
جو چاہو لگا دو ڈر کیسا
گر جیت گئے تو کیا کہنا
ہارے بھی تو بازی مات نہیں ۔ ۔ ۔


https://www.youtube.com/watch?v=D9PfB9J14k4

راہِ طلب میں کون کسی کا ، اپنے بھی بیگانے ہیں




راہِ طلب میں کون کسی کا ، اپنے بھی بیگانے ہیں
چاند سے مکھڑے رشکِ غزالاں سب جانے پہچانے ہیں


تنہائی سی تنہائی ہے ، کیسے کہیں ، کیسے سمجھائیں
چشم و لب و رخسار کی تہ میں روحوں کے ویرانے ہیں

اُف! یہ تلاشِ حسن و حقیقت کس جا ٹھہریں جائیں کہاں
صحنِ چمن میں پھول کھلے ہیں ، صحرا میں دیوانے ہیں

ہم کو سہارے کیا راس آئیں ، اپنا سہارا ہیں ہم آپ
خود ہی صحرا ، خود ہی دِوانے شمع نفس پروانے ہیں

بلآخر تھک ہار کے یارو ! ہم نے بھی تسلیم کیا
اپنی ذات سے عشق ہے سچا ، باقی سب افسانے ہیں



https://www.youtube.com/watch?v=IkJjVdxNBzs



کب یَاد میں تِیرا ساتھ نہیں، کب بات میں تِری بات نہیں

Poet: Faiz Ahmed Faiz - Singers: Khiam & Jagjeet Kaur -
 
 
 

کب یَاد میں تِیرا ساتھ نہیں، کب بات میں تِری بات نہیں

صَد شُکر کہ اپنی رَاتوں میں اَب ہجر کی کوئی رَات نہیں



مُشکل ہیں اگر حالات وہاں دِل بیچ آئیں جاں دے آئیں

دِل والو کوچہِ جَاناں میں کیاایسے بھی حالات نہیں


جس دَھج سے کوئی مَقتل میں گیا وہ شان سلامت رہتی ہے

یہ جَان تو آنی جانی ھے اِس جان کی کوئی بات نہیں


میدانِ وفا دَربار نہیں یَاں نام و نِسبت کی پُوچھ کہاں

عَاشق تو کِسی کا نام نہیں کُچھ عِشق کِسی کی ذات نہیں


گر بازی عِشق کی بازی ہے جو چاہو لگا دو ڈر کیسا

گر جیت گئے تو کیا کہنا ہارے بھی تو بازی مات نہیں




 
کلام: فیض احمد فیض - غزل سرا: خیام اور جگجیت کور


https://www.youtube.com/watch?v=D9PfB9J14k4

تھم گیا جب شب وصال کا شور


تھم گیا جب شب وصال کا شور

 تیری یادوں سے دل آباد کیا
آنسووں کے حسین ستاروں میں
تیری امید کی بہاروں میں
ایک جیون تھا جو بربا کیا
تیری یادوں سے دل آباد کیا

تو نے شکوہ کیا تو خوب کیا
ھم کو رسوا کیا تو خوب کیا
دل کی دھڑکن سے اپنی پوچھو ذرا
کیا کبھی تو نے ھم کو یاد کیا

خود فریبی کی انتہا کر دی
ھر جفا پر وفا نچھاور کی
جا بجا روح پر بھی زخم لگے
بے سبب دل کو بھی نا شاد کیا
آنسووں کےحسیں ستاروں میں
تیری امید کی بہاروں میں
ایک جیون تھا جو برباد کیا
تیری یادوں سے دل آباد کیا




https://www.youtube.com/watch?v=o0Nw4xWqPb0




Wednesday, April 17, 2013

کسی کو معاف کرنے میں وقت نہیں لگتا ، بھولنے میں لگتا ہے .

کسی کو معاف کرنے میں وقت نہیں لگتا ، بھولنے میں لگتا ہے .

Saturday, April 06, 2013

Mujh Se Ab Meri Mohabbat Ke Fasane Na Kaho


Mujh Se Ab Meri Mohabbat Ke Fasane Na Kaho,,,,

Kitni Bekar Umeedon Ka Sahara Lekar
Main Ne Aiwan Sajaye The Kisi Ki Khatir

Kitni Be Rabt Tamannaon Ke Mubham Khake
Apne Khwabon Mein Basye The Kisi Ki Khatir

Mujh Se Ab Meri Mohabbat Ke Fasane Na Kaho
Mujhko Kahnedo Ke Mainne Unhen Chaha Hi Nahin

Kehne Do, Kehne Do,.....................................­...

Aur Woh Mast Nigahen Jo Mujhe Bhool Gayeen
Main Ne Un Mast Nigahon Ko Saraha Hi Nahin

"and when the shooting star sparkles through my night sky
let me not feel the ache of a lost wish
and when the colors of rainbow fade in the blink of an eye
let me not feel the fire that my tears unleash
and when the moments we cherished poisoned my veins
let me not feel the voids that you left behind
and when battling my agony I resent the summer rains
let me not hear the melody that the song birds find"

Mujhko Kahne Do Ki Main Aaj Bhi Ji Saktee Hoon
Ishq Nakam Sahi , Zindagi Nakam Nahin

Unko Apnane Ki Khwahish, Unhen Paane Ki Talab
Shauq Bekar Sahi, Saiye Ghum Anjam Nahin

"let me not think of you in the silence of the night
let me not languish the seasons gone by
aching in your absence with every soft sigh
relieve me from the odes of the lost love."



Thursday, April 04, 2013

اچھے وقتوں کی تمنا میں رہی عمررواں

اچھے وقتوں کی تمنا میں رہی عمررواں 
 وقت ایسا تھا کے بس ناز اٹھا تے گزری 


Wednesday, April 03, 2013

My fev. drams

My fev. drams
Latest
  1. Zindagi Gulzar ha
  2. Humsafar
  3. URAAN
  4. Daam
  5. Man jali
  6. Meray Dildar meray Qatel
  7. Najiya
  8. Ansoo
  9. Aks 
  10. dil-e-abad

EverGreen

  1. Tanhaiyan
  2. Dhopkinary
  3. Ankahi